Gujrat Online Banner
Gujrat Online Add Gujrat Online Add

Poetry

Comments

Gujrat Online Adds

The News International

The News International

Gujrat Online Adds

The News International

ACIL


کہ تم مانو یا نہ مانو

تری بکھری ہوئی سوچیں

ترا اکھڑا ہوا لہجہ

گواہی ہے کسی گزرے ہوئے پَل کی

کسی گزری رفاقت کی

کہ جو منسوب ہے تم سے

کہ تم مانو یا نہ مانو ( تمہارے ماننے نہ ماننے سے کیا )۔

ترے صحرا سے چہرے پر

یہ بےترتیب سی کھنچتی لکیروں میں 

لکھی ہے داستان عہدِ گزشتہ کی

تمہیں تب بھی محبت تھی

تمہیں اب بھی محبت ہے 

کہ تم مانو یا نہ مانو ( تمہارے ماننے نہ ماننے سے کیا )۔


سید عابد بخاری
Latest Updates

شعر

شعر

شعر

تسلی

شعر

غزل

کہ تم مانو یا نہ مانو

شعر

گلاب
Latest Updates

Hira Akhtar

وارث شاہ

امین عاصم

احتشام دھامہ

بابا فرید

بابا بلھے شاہ

جمشید اعظم
Copyrights © Reserved 2009-2012. Gujrat Online . Info